سابق وزیر اعظم نواز شریف کی زیر صدارت دھرنے سے متعلق اہم مشاورتی اجلاس

سابق وزیر اعظم نواز شریف کی زیر صدارت دھرنے سے متعلق اہم مشاورتی اجلاس


 اسلام آباد(24نیوز): سابق وزیر اعظم نواز شریف کی زیر صدارت دھرنے سے متعلق اہم مشاورتی اجلاس میں نواز شریف نے معاملہ افہام و تفہیم سے حل کرنے کی ہدایت کر دی۔ دھرنا کمیٹی سے مذاکرات میں مجوزہ ڈرافٹ پر بھی غور کیا گیا۔ غیر رسمی مشاورتی اجلاس میں نواز شریف نے اتحاد کا مظاہرہ کرنے پر ارکان کا شکریہ بھی ادا کیا۔

سابق وزیر اعظم نواز شریف کی صدارت میں فیض آباد دھرنا سے متعلق اجلاس میں راجہ ظفرالحق، زاہد حامد اور سعد رفیق کی شرکت کی۔ اجلاس میں دھرنے سے متعلق مذاکرات کی پیش رفت پر بات چیت کی گئی اور مجوذہ ڈرافٹ پر بھی مشاورت کی گئی۔ زاہد حامد نے الیکشن بل میں ختم نبوت سے متعلق پیدا ہونے والی صورتحال پر بریف کیا۔ راجہ ظفرالحق نے دھرنے والوں کے مطالبات نواز شریف کے سامنے رکھ دیئے۔ذرائع کے مطابق نواز شریف کا دھرنا والوں سے مزاکرات کے زریعے حل نکالنے پر زور دیا اور کہا کہ کسی قسم کا تشدد یا طاقت کا استعمال نہیں ہونا چاہئیے، راجہ ظفرالحق نے بتایا کہ دھرنا دینے والے زاہد حامد کا استعفی کامطالبہ کر رہے ہیں۔

اس سے قبل مسلم لیگ ن کا غیر رسمی مشاورتی اجلاس ہوا۔ جس میں مریم نواز، مریم اورنگزیب، ڈاکٹر آصف کرمانی، ڈاکٹر طارق فضل چوہدری، دانیال عزیز، امیر مقام، شیخ عنصر عزیز، طلال چوہدری، ڈاکٹر مصدق ملک، وزیر مملکت عابد شیر علی اور پیر صابر شاہ شریک ہیں۔ پیر صابر شاہ نے نواز شریف کو اپنے تحفظات سے آگاہ کیا۔ پیر صابر شاہ نے کہا کہ انہیں خیبر پختونخواہ کی پارٹی سیاست سے سائیڈ لائن کیا جارہا ہے۔ پیر صابر شاہ نے امیر مقام کے رویہ سے متعلق نواز شریف کو شکایت کی۔ جس پر نواز شریف نے پیر صابر شاہ کو تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی کرائی۔

اجلاس میں آج احتساب عدالت میں ہونے والی عدالتی کارروائی پر مشاورت کی گئی۔ اور کل قومی اسمبلی میں اپوزیشن کے مسترد ہونے والے پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ نواز شریف نے اپوزیشن کی جانب سے بل مسترد ہونے پر پارٹی ارکان کو مبارکباد پیش کی۔

نواز شریف نے کہا کہ ارکان نے کل اجلاس میں متحد ہونے کا واضح پیغام دیا۔ اپوزیشن کے بل کے خلاف ساتھ دینے پر ارکان مبارکباد کے مستحق ہیں۔ مستقبل میں بھی ارکان اسی اتحاد و یگانگت کا مظاہرہ کریں۔ ن لیگ کی جانب سے عوامی رابطہ مہم پر بھی بات چیت کی گئی۔ ارکان نے ایبٹ آباد میں کامیاب جلسہ پر مبارکباد دی۔