ہم نے ہاؤسنگ سکیموں پر سنجیدگی سے کام شروع کردیاہے: پرویز خٹک


 پشاور(24نیوز):وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت نے سرکاری ملازمین اور دیگر شہریوں کے رہائشی مسائل کو مدنظر رکھتے ہوئے بینک ہوم فنانس کے ذریعے خپل کور ماڈل ہاؤسنگ سکیم شروع کر دی ہے۔ اس سکیم کے تحت کم آمدنی والے ملازمین اور عام شہری بھی مناسب داموں اپنے مکان کے مالک بن سکیں گے۔

انہوں نے وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں جلوزئی ہاؤسنگ سکیم نوشہرہ میں سرکاری ملازمین کیلئے پلاٹوں کی قرعہ اندازی کی تقریب سے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ ابتدائی طور پر جلوزئی، ملازئی، جرما اور ڈھیری زرداد میں بینک ہوم فنانس کے ذریعے پانچ مرلہ مکانات کی تعمیر شروع کی گئی ہے۔ وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ پہلے مرحلے میں ایک لاکھ 20 ہزار سرکاری ملازمین اور 2 لاکھ عام خاندانوں کو رہائشی سہولت مہیا کی جا رہی ہے جس کی تخمینہ لاگت تین کھرب 76 ارب روپے ہے۔ یہ تمام فنانسنگ کمرشل بینک کریں گے اور20 سال کی آسان اقساط میں یہ رقم واپس ہو گی۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ ہمارے دور میں شروع کردہ ہاؤسنگ سکیمیں نہ صرف مکمل ہونگی بلکہ یہ تمام بنیادی شہری سہولیات پر مبنی عالمی معیار اور جدت کا شاہکار ہونگی۔

 اس ہاؤسنگ سکیم میں پانچ مرلہ، سات مرلہ، دس مرلہ اور ایک کنال کے 8626 پلاٹ تیار کئے ہیں جن میں 3757 پلاٹ چار سال قبل بذریعہ قرعہ اندازی تقسیم کئے گئے تھے جبکہ دوسرے مرحلے میں 3793 پلاٹوں کی قرعہ اندازی کی گئی ہے جس کیلئے بینک آف خیبر کے ذریعے4553 درخواستیں جمع ہوئی تھیں حالیہ قرعہ اندازی کے تحت 23 فیصد کے حساب سے 674 پلاٹ سرکاری ملازمین، 77 فیصد کی شرح سے 2256 پلاٹ عام شہریوں جبکہ سمندر پار پاکستانیوں کیلئے 863 پلاٹ مختص کئے گئے ہیں۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ عوام کو گھر سمیت تمام بنیادی حقوق کی فراہمی ہمارا ایجنڈا ہے، عوام اور سرکاری ملازمین کی رہائشی ضروریات کا ادراک کرتے ہوئے ہم نے ہاؤسنگ سکیموں پر سنجیدگی سے کام شروع کردیاہے۔