چیف جسٹس آلو، ٹماٹر کے بھاؤ سے نکل کر زیر التواء مقدمات کا بھی پتہ کرلیں: نواز شریف


اسلام آباد (24 نیوز) سابق وزیراعظم نوازشریف کا کہنا ہے کہ ان پرمارشل لا ءمیں بھی اتنا پابندیاں نہیں لگائیں گئیں، انکا کہنا ہے کہ انہیں سزادلوانے کی کوشش ہورہی ہے،22 کروڑ عوام کی آواز دبانا قبول نہیں۔

 24 نیوز ذرائع کے مطابق احتساب عدالت کے باہر سابق وزیراعظم نوازشریف نے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مجھے سزا دلوانے کی پوری کوشش کی جا رہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ان پر مارشل لاء میں بھی اتنی پابندیاں نہیں لگائی گئیں۔

یہ بھی ضرور پڑھیں: الیکشن کمیشن کے اقدام پر نوٹس،چیف جسٹس نے نواز شریف کو خوشخبری سنادی

انہوں نے کہا کہ اگرچیف جسٹس خود بات کرتے ہیں تو دوسروں کی بات بھی سنیں۔ نواز شریف کی زبان بندی سے کیا حاصل کرلیں گے۔ 22کروڑ عوام کی آواز دبانا قبول نہیں، روز اسپتال اور آلو ٹماٹر کے بھاؤ تو چیک کرتے ہیں، کبھی زیر التوا مقدمات کا بھی پتہ کر لیں۔

پڑھنا مت بھولئے: عدالت نے پرویز خٹک کو مزید مہلت دے دی

میاں نوازشریف نے چیف جسٹس سے متعلق کہا کہ یہ آپ کا کام نہیں کہ حکومتوں کو کھڑا کر کے تضحیک کریں۔ اس پارلیمنٹ میں دم خم نہیں، تگڑی پارلیمنٹ آ گئی تو سب ٹھیک کر دیں گے۔

سینیٹ الیکشن کومتنازع قراردیتے میاں نوازشریف نے کہا سراج الحق نے بھی کہہ دیا ہے کہ اوپرسے حکم کے بعد ووٹ دئیے گئے۔ ان کا کہنا تھاعمران خان اپنے ایم پی ایز کی تو سرزنش کر رہے ہیں۔ لیکن اپنی بھی کریں کہ کس کے کہنے پر سینیٹ میں تیرکوووٹ دیا ؟

انہوں نے کہا کہ کیا چودھری سرور کے حوالے سے بھی قوم کو جواب دیں گے کہ ان کو ووٹ کیسے ملا ؟انکا مزید کہنا تھا کہ ن لیگ اور اتحادیوں نے سینیٹ الیکشن میں شفاف طریقے سے حصہ لیا۔