آن لائن ٹیکسی سروس خواتین کیلئے غیرمحفوظ

 آن لائن ٹیکسی سروس خواتین کیلئے غیرمحفوظ


کراچی(24نیوز)  آن لائن ٹیکسی سروس خواتین کے لئے غیر محفوظ ہوگئی، گزشتہ برس سے اب تک آن لائن ٹیکسی ڈرائیورزکی جانب سے خواتین کو ہراساں اور لوٹنے کے تین مختلف واقعات سامنے آئے۔

محفوظ سمجھے جانے والی آن لائن ٹیکسی سروس خواتین کے لئے غیر محفوظ، کراچی میں آن لائن ٹیکسی سروس میں خواتین کو ہراسان اور لوٹنے کے تین واقعات سامنے آئے، پہلا واقعہ 20 اکتوبر 2018 کو شاہراہ فیصل پر پیش آیا، جب میڈیکل کی طالبہ نے چلتی گاڑی سے چھلانگ لگادی، آن لائن ٹیکسی سروس پر سفر کرنے والی لڑکی نے الزام عائد کیا تھا کہ ڈرائیور نے اسے ہراساں کیا، ڈرائیورنےلڑکی کےالزامات مسترد کئے، پولیس نے مقدمہ درج تو کیا تاہم ملزم کو شخصی ضمانت رہا کر دیا۔

3 جون 2019 کو آن لائن ٹیکسی میں سفر کرنے والی خاتون کو یونیورسٹی روڈ پر ہراساں اور لوٹ لیا گیا، متاثرہ خاتون کے مطابق اے ٹی ایم پر رکنے کا کہا تو ڈرائیور نے کم رش والی جگہ پر گاڑی روکی اور ہراساں کرنے کے بعد موبائل فون گاڑی میں چھوڑ کر جانے کو کہا، وہ گاڑی میں فون رکھ کر اے ٹی ایم کے اندر چلی گئی اور اےٹی ایم کا دروازہ لاک کرلیاجس کے بعد خاتون نےپولیس اسٹیشن کا رُخ کیا، پولیس نے خاتون کی شکایت پر لوٹ مار میں ملوث ڈرائیور سمیت 4 رکنی گینگ کو گرفتارکیا۔

19 جون 2019 کوڈیفنس میں آن لائن ٹیکسی ڈرائیور کی جانب سے خاتون کو ہراساں کرنے کا تیسرا واقعہ پیش آیا، متاثرہ خاتون کے 15 پر شکایت کرنے کے بعد پولیس نے ڈرائیور کو گرفتار کرلیا، پولیس کے مطابق ملزم نے خاتون کو ہراساں کرنے کے بعد موبائل فون بھی چھینا، ملزم کے خلاف مقدمہ درج کرکہ تحقیقات شروع کردی گئی۔

Malik Sultan Awan

Content Writer