قانون ہار گیا، بدتمیزی جیت گئی

قانون ہار گیا، بدتمیزی جیت گئی


اسلام آباد(24نیوز) اسلام آباد کے ڈپلومیٹک انکلیو میں پولیس اہلکاروں سے بدتمیزی اور دھمکیاں دینے والی خاتون ڈاکٹر شہلا کی درخواست ضمانت منظور، عدالت نے 50 ہزار مچکلوں کے عوض خاتون کو رہا کرنے کا حکم دے دیا۔

 پولیس اہلکاروں سے بدتمیزی اور دھکمیاں دینے کے باوجود جیل کی ہوا نہ کھا سکی۔اسلام آباد کے ڈپلومیٹک انکلیو کے ناکے پر پولیس اہلکاروں سے تمیزی اور دھمکیاں دینے والی خاتون ڈاکٹر شہلا کی درخواست ضمانت پر اسلام آباد کے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت نے ضمانت کی منظوری دے دی۔

ڈاکٹر شہلا کی درخواست ضمانت پر اسلام آباد کے سول جج ثاقب جواد کی عدالت میں سماعت ہوئی۔ ڈاکٹر شہلا کے وکیل نے موقف اپنایا کہ ان کی موکلہ نے اتنا بڑا جرم نہیں کیا، وہ اپنے رویے پر شرمندہ ہیں۔ پولیس کے وکلاء کا کہناتھا کہ ڈپلومیٹک ایریا میں ایسی حرکت سے عالمی سطح پر ملک کی بدنامی ہوئی۔ عدالت نے دلائل سننے کے بعد ڈاکٹر شہلا کو پچاس ہزار کے ضمانتی مچلکوں کے عوض رہا کرنے کا حکم دے دیا۔

واضح رہے کہ پولیس نے ناکے پربغیرنمبر پلیٹ گاڑی میں ڈپلومیٹک انکلیو جانے اور اہلکاروں سے بدتمیزی کرنے پر خاتون کو ہفتے اور اتوار کی درمیانی رات کو گرفتار کیاتھا۔مقامی جوڈیشل مجسٹریٹ عدنان رشید نے پہلے روز درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے میڈیکل چیک اپ کرانے اور ایک روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کیاتھا۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔