لیاقت قائم خانی جسمانی ریمانڈ پرنیب کے حوالے

لیاقت قائم خانی جسمانی ریمانڈ پرنیب کے حوالے


اسلام آباد(2نیوز) جعلی بینک اکاونٹس کیس میں احتساب عدالت نے سابق ڈی جی پارکس کراچی لیاقت قائم خانی کا 14 روزہ جسمانی ریمانڈ منظورکرلیا۔

سابق ڈی جی پارکس کراچی لیاقت قائم خانی کی احتساب عدالت اسلام آباد میں پیشی، جج محمد بشیر نے جعلی بینک اکائونٹس کیس کی سماعت کی۔ نیب کے تفتیشی افسرنے بتایاکہ باغ ابن قاسم کی سیٹلائیٹ تصاویر لی ہیں۔ ملزم نے جان بوجھ کر 2005 میں باغ کا ایک ایریا چھوڑ دیا۔ بطور ڈی جی پارکس باغ کی زمین گلیکسی انٹرنیشنل کوغیرقانونی طورپرالاٹ کی جسے باغ کے ریکارڈ سے بھی نکال دیا۔

تفیشی افسر نے کہا کہ لیاقت قائم خانی کے گھرسے خزانہ بھی ملا۔ منی ٹریل سے متعلق معلوم کرنا ہے۔ 14 روزہ جسمانی ریمانڈ دیا جائے۔ لیاقت قائم خانی کے وکیل نے جسمانی ریمانڈ کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ موکل کےخلاف کوئی ثبوت نہیں۔پاکستان میں الٹا قانون ہے پہلے گرفتار کرتے ہیں پھر ثبوت ڈھونڈتے ہیں۔ دوران سماعت لیاقت قائم خانی روسٹرم پرآئے اوربولے کہ انہیں شوگرہے۔ پرہیزی کھانا کھاتے اور رات کو انسولین لیتے ہیں۔زمین کی الاٹمنٹ پردستخط نہیں کیے۔

عدالت نے لیاقت قائم خانی کو 14 روزہ جسمانی ریمانڈ پرنیب کے حوالے کردیا۔ ملزم نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ جائیداد ان کے اکیلے کی نہیں پورے خاندان کی ہے۔لیاقت قائم خانی کا یہ بھی کہنا تھا کہ معاملہ عدالت میں ہے۔وہیں جواب دیں گے۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔