چیف جسٹس جج کیسے بنے؟نیب تحقیقات کرے:نواز شریف


اسلام آباد( 24نیوز )سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ نیب مارشل لاءکا کالا قانون ہے،غلطی ہوگئی کہ اسے ختم نہیں کرسکے۔
انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ دیکھ رہے ہیں کے چیف جسٹس ہمارا کتنا خیال رکھ رہے ہیں،ہمیں اس نظام سے انصاف ملنے کی امید نہیں ہے۔ہمارے خلاف جس طرح کے کیسز بنائے گئے ماضی میں اس کی مثال نہیں ملتی، اربوں کھربوں کا الزام لگایا گیا لیکن آج تک کوئی بھی چیز ثابت نہیں ہوسکی، اللہ تعالیٰ ہمیں تمام الزامات سے سرخرو کرتا جارہا ہے، لندن فلیٹس ہم نے قومی خزانے سے نہیں خریدے اگر ہم نے کرپشن کے ذریعے مال بنا کر اثاثے بنائے تو پھر الزام ثابت بھی ہونے چاہئیں اور جب کرپشن کا کوئی معاملہ دور دور تک نہیں تو یہ سلسلہ ختم ہونا چاہئے۔

یہ بھی پڑھیں:بڑے بڑے ن لیگی سیاسی” تھم“گرانے کیلئے عمران خان کی لاہور میں انٹری
سابق وزیراعظم نے کہا کہ ہمیں علم تھا کہ نیب مارشل لا کا قانون ہے لیکن غلطی ہوئی اس کو ختم نہیں کرسکے اب مشرف دور کے کالے قانون کو ختم ہونا چاہئے، نیب کو یہ بھی تحقیقات کرنی چاہئے کہ چیف جسٹس کو پہلے سیکرٹری لاءاور پھر جج کیسے بنایا گیا، عدلیہ ہمارا 8 ماہ سے جس طرح خیال رکھ رہی ہے وہ سب کے سامنے ہے، عوام اور سول سوسائٹی بھی اس بات پر متفق ہے کہ عدلیہ میں اصلاحات ہونی چاہئیں۔