نواز اور شہباز جیل کے ایک کمرے میں رہیں گے، ذرائع

نواز اور شہباز جیل کے ایک کمرے میں رہیں گے، ذرائع


اسلام آباد(24نیوز) میاں نوازشریف کواڈیالہ جیل پہنچا دیا گیا ہے۔انتظامات مکمل نہ ہونے کی وجہ سے ان کو کل لاہور کی کوٹ لکھپت جیل منتقل کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے نواز شریف کے خلاف نیب ریفرنسز پر فیؒصلہ سنایا۔ فیصلے کے مطابق العزیزیہ ریفرنس کیس میں نواز شریف کو 7 سال قید بامشقت کی سزا سنائی گئی جبکہ فلیگ شپ ریفرنسز میں ان کو بری کردیا گیاہے۔ 

اس موقع پر نواز شریف نے عدالت سے درخواست کی کہ انھیں اڈیالہ جیل کی بجائے لاہور جیل منتقل کیا جائے، نیب پراسیکیوٹر کی جانب سے نواز شریف کی درخواست کی مخالفت کی گئی، تاہم عدالت نے سابق وزیراعظم کی درخواست منظور کرتے ہوئے انہیں کوٹ لکھپت جیل منتقل کرنے کا حکم دے دیا، لیکن آج کی رات کوٹ لکھپت جیل میں انتظامات مکمل نہ ہونے کی وجہ سے انھیں اڈیالہ جیل ہی رکھا گیا ہے۔ 

ذرائع کے مطابق نوازشریف اورشہبازشریف جیل کےایک ہی کمرےمیں بندہوں گے۔

نواز شریف کو کون کونسی سہولیات ملیں گی؟

نوازشریف کو کوٹ لکھپت جیل منتقل کرتےہی ایڈمن بلاک بھیجاجائے گا۔ ذرائع سپرنٹنڈنٹ کی موجودگی میں نوازشریف کامیڈیکل کرایاجائےگا۔ نوازشریف کومیڈیکل کےبعدشہبازشریف کے ساتھ قیدکیاجائےگا۔

ذرائع کے مطابق سکیورٹی وارڈمیں ایک اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ،4جیل وارڈزموجودہونگے، نوازشریف اپنابستر،ادویات اورکتابیں لاسکتےہیں۔ بی کلاس کی اجازت کےبعدنوازشریف کیلئےگھرسےکھانااور کپڑےلائےجاسکتے ہیں۔ حکام کھاناچیک کرنےکےبعدنوازشریف کےحوالےکریں گے۔ بی کلاس کی اجازت کےبعدچارپائی،ٹی وی،اخباراورٹیبل دیاجائےگا۔جیل ذرائع کے مطابق نوازشریف اورشہبازشریف کےسکیورٹی وارڈ کی صفائی کرادی گئی۔

واضح رہے کہ  شہباز شریف پر آشیانہ ہاؤسنگ اسکینڈل میں ملوث ہونے کا الزام ہے۔ 

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔