خیبرایجنسی کی تحصیل باڑہ میں بے روزگاری,بند کارخانے نہ کھولے گئے


پشاور(24نیوز) خیبرایجنسی کی تحصیل باڑہ میں بند کارخانوں کے تالے کب کھلیں گے؟ بے روزگار مزدوروں کی کب سنی جائے گی؟دہشتگردی کے خلاف آپریشن کے باعث بند کئے گئے 200 سے زائد کارخانے نہ کھولے گئے،مزدور مالی مشکلات کا شکار ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق خیبر ایجنسی کی تحصیل باڑہ میں دہشتگردی کیخلاف آپریشن کے دوران مختلف اشیاء تیار کرنیوالے200 سے زائد کارخانے بند کر دیئے گئے۔ ان کارخانوں میں  ہزاروں ہنر مند کام کرتے تھے اور یہاں سے خیبر پختونخوا سمیت پورے ملک میں مال بھیجاجاتا تھا۔ تحصیل باڑہ کے علاقوں ملک گڑھی سردار کلی, ذوالفقار کلی اور کاریگر گڑھی میں 1955ء سے قائم بیشتر کارخانوں میں  کپڑا, ہوزری اور پلاسٹک کا سامان تیار کیا جاتا تھا- ان کارخانوں سے درجنوں خاندانوں کا روزگار وابستہ تھا لیکن کارخانے بند ہونے سے یہ لوگ شدید مشکلات و مسائل کا شکار ہیں۔

واضح رہے کہ آپریشن کے دوران بند ہونیوالے  کارخانوں کو گورنر خیبر پختونخوا نے 2009 میں کھولنے کا اعلان بھی کیا تھالیکن زیادہ تر کارخانے تاحال بند ہیں جس سے بیروزگاری میں بھی اضافہ ہوا ہے۔