نقیب قتل کیس: ایس ایس پی راؤ انوار نے بیان ریکارڈ کرا دیا، چشم کشا انکشاف

نقیب قتل کیس: ایس ایس پی راؤ انوار نے بیان ریکارڈ کرا دیا، چشم کشا انکشاف


کراچی (24 نیوز) نقیب اللہ قتل کیس کے حوالے سے بنائے جانے والی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) میں سابق ایس ایس پی ملیرراؤ انوار نے اپنا بیان ریکارڈ کرا دایا۔

ریکارڈ کرائے گئے بیان کے مطابق نقیب اللہ کو سہراب گوٹھ چوکی انچارج اکبر ملاح، فیصل اور انار خان نے اٹھایا اور تفتیش کی۔ مقابلہ کی اطلاع انسپکٹر جنرل (آئی جی) سندھ کو دے کر میں مقابلہ کی جگہ پر پہنچا۔

یہ بھی پڑھئے: سب جانتے ہیں نیب سندھ اور پنجاب میں کیا کر رہا ہے، شرجیل میمن 

انہوں نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ واقعہ کی اطلاع ایس ایچ او شاہ لطیف نے موبائل فون کے ذریعہ دی۔ موقعہ پر ایس ایچ او اور ڈی ایس پی شاہ لطیف موجود تھے۔

میرے موبائل فون کے ڈیٹا اور کال ریکارڈنگ کو تفتیش کا حصہ بنایا جائے۔ نقیب اللہ سے تفتیش اور مقابلہ کے بارے میں مفرور تین اہلکار بہتر بتا سکتے ہیں۔

پڑھنا نہ بھولئے: رحمان ملک بھی قانون کی گرفت میں آ گئے

جعلی مقابلہ کے متعلق علم ہوتے ہی تفتیش شروع کی تھی لیکن عدالتی حکم پر مجھے ہٹا دیا گیا۔ تفتیش کرتا تو ملوث افراد کا تعین کرسکتا تھا۔

واضح رہے کہ سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار نے اپنا بیان ریکارڈ کرا دیا ہے۔ جبکہ جے آئی ٹی کا دوسرا اجلاس اگلے ہفتہ متوقع ہے۔