چین نے سمندر کے سینے پر سب سے بڑا عجوبہ قائم کردیا

چین نے سمندر کے سینے پر سب سے بڑا عجوبہ قائم کردیا


بیجنگ( 24نیوز ) معیشت کو فتح کرتے چین نے ایک بار پھر بڑا عجوبہ قائم کرکے دنیا میں اپنی دھاک بٹھا دی،سمندر کے سینے پربڑی بڑی گاڑیاں دوڑا دیں۔

چینی صدر شی چن پنگ نے سمندر پر بنائے گئے دنیا کے سب سے بڑے پل کا افتتاح کردیا، چین کے جنوبی ساحلی شہر ڑوہوئی میں تعمیر کیے گئے 55 کلومیٹر طویل بحری کراسنگ برج کا افتتاح کردیا-

سمندر کے اوپر تعمیر کیے گئے پل کو تکمیل میں 9 سال لگے اس پل سے چین کو ہانگ کانگ اور مکاوسے ملادیا جائے گا جب کہ اس پل کی وجہ سے چین کے 11 شہروں کے درمیان زمینی رابطہ بحال ہوجائے گا۔ یوں 68 ملین افراد ایک دوسرے سے منسلک ہوجائیں گے۔

55 کلومیٹر طویل اس پل میں 6.7 کلومیٹر کا ٹنل بھی بنایا گیا ہے، باقی 22.9 کلو میٹر کے مرکزی برج کے علاوہ ایک مصنوعی جزیرہ بھی بنایا گیا ہے جس پر شاندار روشنی کا انتظام کیا گیا ہے۔

چین کو ہانگ کانگ سے ملانے والےاس پل سے 11 شہروں کے درمیان نہ صرف فاصلہ کم ہوگیا ہے بلکہ معیشت اور تجارت کو بھی فروغ ملے گا اور معاشی سرگرمیوں میں اضافہ ہوجائے گا۔

انتہائی مضبوط اور ٹھوس ترین اسٹیل سے بنایا گیا پل سمندر کی ظالم لہروں کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے اور اس پر بیک وقت ہزاروں گاڑیاں سفر کرسکتی ہیں۔