"عمران خان عظیم لیڈر ہیں"، صدر ٹرمپ کی ایک بار پھر مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش



نیویارک(24نیوز) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات میں ایک بار پھر کشمیر کے مسئلے پر ثالثی کی پیشکش کردی۔

وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مشترکہ پریس کانفرنس کی جس میں امریکی صدر نے ایک بار پھر پاکستان اور بھارت کے درمیان ثالثی کی پیشکش کی۔انھوں نے ساتھ ہی یہ بھی کہا کہ ثالثی کیلئے ضروری ہوتا ہے کہ دونوں فریقین تیار ہوں۔  آپ تیار ہیں لیکن دوسری طرف بھارت ثالثی کی پیشکش کیلئے تیار نہیں'۔ ٹرمپ نے کہا معاملہ بہت پیچیدہ ہے جو بہت عرصے سے چلا آرہا ہے، اگر دونوں جینٹلمین مان جائیں تو میں بہت اچھا ثالث ہوں گا، ناکام نہیں ہوں گا۔

امریکی صدر نے کہا کہ عمران خان عظیم لیڈر ہیں، عمران خان انسداد دہشتگردی میں پیشرفت چاہتے ہیں ۔ عمران خان یہ سمجھتے ہیں ، کیونکہ دوسرا راستہ نہیں، دوسرا راستہ موت، افراتفری اور غربت کی طرف جاتاہے۔انھوں نے کہا کہ 3 دن کے مختصر وقت میں سب لیڈران سے ملنا تھا لیکن میں پاکستان کے وزیراعظم سے ملنے کیلئے بے تاب تھا، عمران خان سے ملنے کو اپنے لئے اعزاز سمجھتا ہوں۔ انھوں نےکہا سابقہ امریکی حکومتوں نے پاکستان سے اچھا سلوک نہیں کیا، لیکن اب میرے وزیر اعظم عمران خان سے بہت اچھے تعلقات ہیں۔

اس موقع پر عمران خان نےامریکی صدرسےمطالبہ کیاکہ مودی سےکہیں کشمیرسےکرفیوہٹائے۔ امریکی صدر نے یقین دہانی کرائی کہ میں کشمیر سے کرفیو اٹھانے کیلئے مودی سے بات کروں گا۔وزیراعظم نے کہا کہ ٹرمپ    ٹرمپ دنیا کے طاقت ور ترین ملک کے صدر ہیں اور ان پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔ عمران خان  نے کہا یہ بحران مزید بڑا ہوسکتا ہے، صدر ٹرمپ اور میں اس پر بات کریں گے، امریکا طاقت ورملک ہے اور سلامتی کونسل پر اثر ڈال سکتا ہے۔ 

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔