آل پارٹیز کانفرنس، صدارتی امیدوار کے نام پر ڈیڈ لاک برقرار


اسلام آباد(24نیوز) مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کی زیر صدارت آل پارٹیز کانفرنس آج مری میں ہو رہی ہے ، کانفرنس میں صدارتی انتخاب میں اپوزیشن کا مشترکہ امیدوار لانے پر مشاورت کی جارہی ہے۔

اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرنس دو گھنٹے سے جاری ہے،  صدارتی امیدوار کے ساتھ ساتھ اپوزیشن اتحاد کے مستقبل پر بھی بات چیت ہو رہی ہے ۔ پیپلزپارٹی اعتزاز احسن کو متفقہ صدارتی امیدوار بنانے پر مصر ہے. تاہم ابھی تک اتفاق رائے نہیں ہو سکا ہے۔

مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں پاکستان پیپلز پارٹی، متحدہ مجلس عمل،  عوامی نیشنل پارٹی، پختونخواہ میپ اور نیشنل پارٹی کے رہنماء شرکت کی ہے۔

آل پارٹیز کانفرنس  میں شرکت کے لئے پیپلز پارٹی  کے وفد میں یوسف رضا گیلانی،  راجہ پرویز اشرف، خورشید شاہ، اعتزاز احسن، شیری رحمان اور  قمر زمان کائرہ شامل ہیں۔  پیپلز پارٹی کی جانب سے اعتزاز احسن کا نام صدارتی امیدوار کے لئے پیش کیا گیا ہے۔آصف علی زرداری خرابی صحت جبکہ بلاول بھٹوبیرونِ ملک ہونے کی وجہ سے کانفرنس میں شرکت نہیں کرسکے۔

کانفرنس  میں متحدہ مجلس عمل  کا تین رکنی وفد شرکت کی جبکہ محمود اچکزئی کوئٹہ میں مصروفیت کے باعث شریک نہیں ہو سکے۔

صدر کا انتخاب: 

ملک کےنئے صدرِکا انتخاب 4ستمبرکوہوگا جس کے لئے پارلیمنٹ کامشترکہ اجلاس طلب کیا گیا ہے۔ صدارتی الیکشن کے الیکٹرول کالج میں سینٹ ، قومی اسمبلی اور چاروں صوبائی اسمبلیاں شامل ہیں۔صدرکاانتخاب خفیہ رائے شماری سےکیا جائے گا۔

پی ٹی آئی اوراس کی اتحادی جماعتوں نے عارف علوی کو صدارتی امیدوارنامزدکردیا ہے، جن کواپوزیشن کےامیدوارپرمعمولی برتری حاصل ہوگی۔ حکومتی اتحادی جماعتوں میں ق لیگ، ایم کیوایم،بلوچستان عوامی پارٹی،بی پی این پی مینگل،گرینڈڈیموکریٹک الائنس اورجمہوری وطن پارٹی شامل ہیں۔عارف علوی کوتمام اسمبلیوں میں آزاد ارکان کی اکثریت کی حمایت بھی حاصل ہوگی۔
اپوزیشن نے بھی مشترکہ امیدوارلانے کی کوششیں تیز کردی ہیں،اس سلسلے میں میاں شہبازشریف کی میزبانی میں مری میں اے پی سی ہورہی ہے، جس میں ن لیگ کے علاوہ پیپلزپارٹی،ایم ایم اے،پختونخوا میپ،اے این پی اورنیشنل پارٹی کوشرکت کی دعوت دی گئی ہے۔ 
اُدھرسابق وزیرِ اطلاعات پرویزرشید  نے مطالبہ کیا ہے کہ اعتزازاحسن اڈیالہ جاکرنوازشریف سے اپنے بیانات کی معافی مانگ لیں توان کے نام پر غورہوسکتا ہے۔اس کے جواب میں اعتزازاحسن نے پرویزرشید کوکھری کھری سنادیں اوران کا معافی مانگنے کامطالبہ بھی مستردکردیا۔
اپوزیشن حکومتی صدارتی امیدوارکے مقابلے میں مشترکہ امیدوارلے آئی تواس کی کامیابی کےامکانات ہوسکتے ہیں لیکن اگرن لیگ نے پیپلزپارٹی کی بات نہ مانی توعارف علوی آسانی سے صدرمنتخب ہوجائیں گے۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔