امریکی ڈرون حملہ افغان مہاجر کیمپ پر کیا گیا: ڈی جی آئی ایس پی آر


اسلام آباد (24 نیوز) دفتر خارجہ اور آئی ایس پی آر کے مطابق 24 جنوری کو کرم ایجنسی اور ہنگو کے قریب ہونے والا امریکی ڈورن حملہ افغان مہاجر کیمپ میں چھپے ہوئے دہشت گردوں پر کیا گیا ، جبکہ امریکہ نے اس دعوے کی تردید کر دی ہے۔

وزارت خارجہ اور افواج پاکستان کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور کے مطابق ڈرون حملہ ہنگو کے علاقے سپنٹل میں واقع افغان مہاجر کیمپ میں چھپے ہوئے دہشت گردوں پر کیا گیا۔ ان کا کہنا ہے کہ حملہ دہشت گردوں کے کسی خفیہ ٹھکانے پر نہیں، کیمپ میں انفرادی طور پر پناہ لینے والا ہدف تھا۔

میجر جنرل آصف غفور کا مزید کہنا تھا کہ افغان مہاجر کیمپ میں دہشت گرد کی موجودگی پاکستانی موقف کی تصدیق ہے کہ افغان مہاجر کیمپوں میں دہشت گرد چھپتے ہیں۔

مہاجرین کی افغانستان سے باعزت واپسی نہایت ضروری ہے۔ پاکستان میں 54 افغان مہاجر کیمپوں میں سے 43 کیمپ فاٹا اور ہنگو سمیت خیبر پختونخوا میں ہیں۔ اور ان میں سے 18 تو نقشے پر بھی موجود ہیں۔

امریکا پاکستان کے اس دعوے کے ساتھ متفق نہیں کہ ڈرون حملہ افغان مہاجر کیمپ میں چھپے دہشت گرد پر کیا گیا۔ اسلام آباد میں امریکی سفارتخانے نے اس دعویٰ کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈرون حملہ افغان مہاجر کیمپ پر نہیں کیا گیا۔