فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام کا بل سینیٹ سے بھی منظور

01:03 PM, 25 مئی, 2018

اسلام آباد (24نیوز) قومی اسمبلی سے منظوری کے بعد فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام سے متعلق آئین میں اکتیسویں ترمیم سینیٹ میں منظور  کر دی گئی، ترمیم وزیر قانون بشیر محمود ورک نے پیش کی.

چیئرمین صادق سنجرانی کی زیر صدارت سینیٹ کا اجلاس ختم ہوگیا  جس میں  فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام سے متعلق آئین میں اکتیسویں ترمیم سینیٹ میں پیش کی گئی۔  وفاقی وزیر قانون و انصاف محمود بشیر ورک نے  آئینی بل پیش کیا۔ 

 آئینی ترمیمی بل کی حمایت میں 71 اور مخالفت میں 5 ووٹ آئے۔حکومت کی اتحادی جماعت جمعیت علماء اسلام (ف) اور پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے ارکان نے ووٹنگ میں حصہ نہیں لیا۔ 

 اپوزیشن لیڈر شیری رحمان نے ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پیپلز پارٹی کے دور میں فاٹا اصلاحات پر کام شروع ہوا، فاٹا کے لوگ پوری شہریت اور صرف اپنا بنیادی حق مانگ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی نے فاٹا سے فرنٹیئر کرائمز ریگولیشن کے خاتمے کی بات کی۔

پاکستان تحریک انصاف نے  بھی سینیٹ میں اپنے اراکین کو حاضری یقینی بنانے کی ہدایت کی تھی ، جبکہ جمعیت علماء اسلام (ف) اور پختونخوا ملی عوامی پارٹی کی جانب سے پہلے سے ہی  فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام پر مخالفت کی جارہی تھی۔

یاد رہے گزشتہ روز  ایاز صادق کی زیر صدارت  قومی اسمبلی کا اجلاس ہوا جس میں 229 اراکین نے فاٹا کے خیبر پختونخواہ میں انضمام پر اتفاق کیا۔

مزیدخبریں