امریکی سینیٹر جان مکین نے علاج روک کر موت کو گلے لگالیا

امریکی سینیٹر جان مکین نے علاج روک کر موت کو گلے لگالیا


واشنگٹن(24نیوز) امریکی سینیٹر جان مکین نے علاج روک کرموت کو گلے لگالیا، جان مکین دماغ کے کینسر کےعلاج سے تنگ تھے،اہل خانہ نے انتقال کی تصدیق کردی۔امریکی صدر،کانگریس ارکان اوردیگر عالمی شخصیات نے اظہارافسوس کیا۔

امریکی سینیٹر جان مکین دماغ کےکینسرکے ہاتھوں زندگی ہارگئے، وہ کافی عرصہ سے بیمار اور زیرعلاج تھے۔ جان مکین نےگزشتہ روزکینسرکاعلاج ترک کردیاتھا۔ اہل خانہ نے انکی موت کی باقاعدہ تصدیق  کی۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور دیگرعالمی شخصیات نے جان مکین کے انتقال پراظہار افسوس کیا ہے۔

امریکی سینیٹرجان مکین ایک زندہ دل شخصیت تھے۔  ہروقت پراعتماد نظرآنے والے جان مکین نے ایک سال پہلے سی این این کو انٹرویو میں بیماری سے متعلق بالکل بھی حیرانی کا اظہار نہ کیا۔ انہوں نے بڑے پرتکلف اور پراعتماد لہجے میں جوابات دیئے، انھوں نے کہا کہ معاملہ کو دیکھنے کے دو طریقے ہیں اوران میں سے ایک ہےجشن منانا ، جتنی بھی زندگی میرے پاس ہے اسےجشن کے طور پر مناؤں گا۔

جان مکین کون تھے؟ 

جان مکین 29اگست 1936 کوپاناما کینال زون میں پیدا ہوئے۔ امریکی بحریہ میں پائلٹ اورویت نام میں پانچ سال جنگی قیدی بھی رہے ۔1982 میں پہلی مرتبہ ایوان زیریں کے رکن منتخب ہوئے پھرسینیٹ کے بھی ممبر رہے ۔  جان مکین نے ری پبلکن پارٹی کیطرف سے سابق صدربارک اوباماکے مقابلہ میں صدارتی الیکشن بھی لڑالیکن وہ ہارگئے، ان کے ہی دورمیں افغانستان میں جنگ لڑی گئی جس میں ہزاروں بے گناہ لوگوں کا قتل عام بھی کیا گیا۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔