محکمہ توانائی بلوچستان نے چینی کمپنی سے رپورٹ طلب کرلی

محکمہ توانائی بلوچستان نے چینی کمپنی سے رپورٹ طلب کرلی


گوادر(24نیوز) کول پاور پراجیکٹ پر صوبائی حکومت نے کئی سوالات اٹھا دئیے، محکمہ توانائی نے چینی کمپنی سے منصوبے سے صوبے پر پڑنے والے ماحولیاتی اثرات سے متعلق رپورٹ طلب کرلی۔

تفصیلات کے مطابق گوادر میں کوئلے سے توانائی پیدا کرنے کا منصوبہ ابھی شروع نہیں ہوا۔ بلوچستان حکومت نے منصوبے پر کئی سوال کھڑے کر دئیے۔ ان سوالوں کی روشنی میں چینی کمپنی سے تفصیلی رپورٹ بھی طلب کرلی۔ صوبائی حکومت کے جاری کئے گئے مراسلے میں چینی کمپنی سے پوچھا گیا کہ کوئلے کو گوادر پورٹ سے پاور پلانٹ تک کیسے پہنچایا جائے گا۔ ٹرکوں اور کنٹینرز سے گرنے والے کوئلے کو کیسےمحفوظ کیا جائے گا۔پاور پلانٹ سے اڑنے والی راکھ کو شہر میں اڑنے سے کیسےروکا جائے گا۔ کول پاور پلانٹ کا گدلا پانی کہاں پھینکا جائے گا۔ گدلے پانی کو کراوٹ ڈیم میں پھینکنے سے صاف پانی خراب ہوگا۔

واضح رہے کہ کراوٹ ڈیم کے ذریعے گوادر شہر کو پانی فراہم کیا جا رہا ہے۔ڈیم کا پانی محفوظ رکھنے کیلئے کیا اقدامات کیے جا رہے ہیں۔  چینی کمپنی گوادر میں 300 میگا واٹ کا کول پاور پراجیکٹ لگا رہی ہے. یہ منصوبہ سی پیک کا حصہ ہے۔