گلگت بلتستان آرڈر کیخلاف احتجاج، پولیس کی ہوائی فائرنگ، متعدد مظاہرین زخمی


اسلام آباد (24 نیوز) گلگت بلتستان آرڈر 2018 کے خلاف متحدہ اپوزیشن اور عوامی ایکشن کمیٹی کا احتجاج، پولیس کی ہوائی فائرنگ آنسو گیس کی شلینگ، چیئرمین عوامی ایکشن کمیشن سلطان رئیس سمیت متعدد افراد زخمی، مرکزی انجمن تاجران نے کل وزیراعظم کے آمد کے موقع پر شٹرڈوان ہڑتال کا اعلان کردیا۔

تفصیلات کے مطابق گلگت میں متحدہ اپوزیشن اور عوامی ایکشن کمیٹی گلگت بلتستان آرڈر2018 کے خلاف سراپا احتجاج ہیں۔ مظاہرین نے مطالبات کی منظوری کے لیے گھڑی باغ سے قانون ساز کونسل کی طرف مارچ شروع کی تو راستے میں پولیس کے ساتھ جھڑپیں ہوئی۔پولیس نے آنسو گیس کے شیلنگ پھینکے اور ہوائی فائرنگ کی۔

یہ بھی پڑھیں: گلگت بلتستان اسمبلی کو مکمل اختیارات مل گئے 

شلینگ سے چیئرمین عوامی ایکشن کمیٹی سلطان رئیس اور دو سالہ بچے سمیت متعدد افراد زخمی ہوگئے۔ واقعہ کے خلاف اپوزیشن جماعتوں اور مرکزی انجمن تاجران نے کل وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی دورہ گلگت کے موقع پر شٹر ڈوان ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔

اپوزیشن کا کہنا ہے کہ مطالبات کی منظوری تک احتجاج جاری رکھیں گے۔ اپوزیشن جماعتوں نے شلینگ کے ذمہ دوران کے خلاف مقدمہ درج کرنے کے لیے درخواست سٹی تھانہ میں جمع کرا دی ہے۔

پڑھنا نہ بھولیں: گلگت بلتستان کو مرکزی دھارے میں شامل کرنے کے حوالے سے سیمینار 

واضح رہے کہ ادھراسکردو یادگار چوک پر جی بی اصلاحاتی پیکج کے خلاف احتجاجی دھرنے کے دوران رکن گلگت بلتستان اسمبلی کاچو امتیاز کے حامیوں اور مظاہرین آپس میں الجھ پڑے۔