سانحہ ماڈل ٹاﺅن،نوازشریف،شہباز شریف کی قسمت کا فیصلہ، طاہر القادری نے بڑا اعلان کردیا


لاہور( 24نیوز ) لاہور ہائیکورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے حوالے سے درخواستوں پر فیصلہ سنا دیا،نواز شریف،شہباز شریف،رانا ثنا اللہ کی طلبی کی درخواست مسترد کردی گئی،سابق آئی جی مشتاق سکھیرا کی انسداددہشت گردی کورٹ طلبی کےخلاف درخواست بھی مسترد کردی گئی، نواز شریف، شہباز شریف ، رانا ثنائ اللہ سمیت دیگر سابق حکومتی شخصیات کو سانحہ ماڈل ٹاو¿ن استغاثہ میں بری الذمہ قرار دے دئے گئے
لاہورہائیکورٹ کے جسٹس محمد قاسم خان کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے فیصلہ سنایا ،سابق آئی جی مشٹاق سکھیرا نے انسداددہشتگردی کی عدالت کے طلب کرنے کے حکم کو چیلنج کیا تھا،مشتاق سکھیرا نے استدعا کی تھی کہ سانحہ ماڈل سے کوئی تعلق نہیں ہے ،ان کا نام استغاثہ سے خارج کیا جائے۔
یاد رہے سانحہ ماڈل ٹاﺅن میں چودہ افراد ہلاک ہوگئے تھے،سابق آئی جی پنجاب پولیس مشتاق سکھیرا کی اے ٹی سی طلبی کا حکم برقراررکھا،لاہورہائیکورٹ نے 27 جون کومحفوظ کیا گیا فیصلہ سنا یا۔
لاہورہائیکورٹ میں سانحہ ماڈل کے متعلق اہم فیصلہ سنا دیا گیا ،لاہورہائیکورٹ کے تین رکنی فل بنچ نے انسدادہشت کورٹ طلب نہ کرنے کیخلاف درخواست خارج کردی ،فل بنچ نے عوامی تحرہک کے جواد حامد کی جانب سے نواز شریف، ، شہباز شریف سمیت دیگر کی اے ٹی سی کی طلبی کی درخواست مسترد کردی۔
منہاج القرآن کے وکیل جواد حامد نے اپنی درخواست میں موقف اختیار کیا تھا کہ نواز شریف، شہباز شریف ،، رانا ثناءاللہ اور دیگر سابق حکومتی عہدیداروں کے نام استغاثہ سے خارج کردیے گئے ہیں،انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے حقائق کے برعکس فیصلہ کی،نواز شریف، شہباز شریف ، حمزہ شہباز سمیت دیگر لیگی شخصیات کو طلب کیا جائے۔

طاہر القادری کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان
دوسری جانب پاکستان عوامی تحریک نے فیصلے کوسپریم کورٹ میں چیلنج کرنےکااعلان کر دیا ہے،ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا ہے کہ منصوبہ ساز طلب نہیں ہوں گے تو انصاف کیسے ہو گا؟ملازموں کو طلب کیا گیا مگر مالکان کو نہیں کیا۔