عظیم شاعر مرزا اسداللہ غالب کا آج 220 واں یوم ولادت

عظیم شاعر مرزا اسداللہ غالب کا آج 220 واں یوم ولادت


پوچھتے ہیں وہ کہ غالب کون ہے

کوئی بتلائے کے ہم بتلائیں کیا

ویب ڈیسک (24نیوز) اردو شاعری میں تخیل کی بلندی اور شوخی فکرکو جلا بخشنے والے عظیم المرتبت ادیب و شاعر مرزا اسد اللہ خان غالب کا آج دو سو بیسواں یوم پیدائش ہے۔

تفصیلات کے مطابق اردو اور فارسی کے عظیم شاعر اسد اللہ خان غالب 27 دسمبر 1797 میں آگرہ میں پیدا ہوئے,مغل بادشاہ کی طرف سے نجم الدولہ، دبیر الملک اور نظام جنگ کے خطابات عطا ہوئے، غالب ان کا تخلص تھا اور اس کا اثر ان کے کلام پر بھی رہا، کوئی انہیں مغلوب نہ کر سکا۔پانچ سال کی عمر میں والد کی وفات کے بعد غالب اپنے چچا کے ہاں رہنے لگے تاہم چار سال بعد چچا کا سایہ بھی ان کے سر سے اٹھ گیا۔

غالب نے لڑکپن سے ہی شعر کہنا شروع کردیئے تھے، شادی کے بعد غالب دہلی منتقل ہوگئے، جہاں انھوں نے ایک ایرانی باشندے عبد الصمد سے فارسی کی تعلیم حاصل کی۔

غالب اردو اور فارسی میں شعر کہتے تھے تاہم فارسی شاعری کو زیادہ عزیز جانتے تھے۔ غالب کی شاعری، رومانیت، واقعیت، رندی، تصوف، شوخی و انکساری جیسی متضاد کیفیتوں کا حسین امتزاج ہے,اپنی آخری عمر میں غالب شدید بیمار رہنے لگے اور بالآخر پندرہ فروری 1869 کو خالق حقیقی سے جاملے۔

واضح رہے کہ اردو شاعری کو نئے رجحانات سے روشناس کرانے والے یہ شاعر اردو ادب میں ہمیشہ غالب رہیں گے۔