خیبر پختونخوا اسمبلی: ایم پی اے ارباب جہاںداد نے بلدیو کمار کو جوتا دے مارا


پشاور(24نیوز) خیبر پختونخوا اسمبلی کے اقلیتی ممبر سردار سورن سنگھ کے مبینہ قاتل بلدیو کمار کو حلف برداری کے لیے اسمبلی بلایا گیا۔ ایم پی اے جہانداد خان نے انھیں جوتا دے مارا ساتھی ممبران بلدیو کمار کو اسمبلی سے باہر لے گئے۔

تفصیلات کے مطابق پشاور ہائی کورٹ کی ہدایت پر اسپیکر کے پی اسمبلی نے پروڈکشن آرڈر جاری کیا۔ جس کے تحت اقلیتی رکن سردارسورن سنگھ کےگرفتار مبینہ قاتل بلدیو کمار کو اسمبلی میں حلف کے لئے بلایا گیا۔ جس پر اسمبلی میں ہنگامہ کھڑا ہوگیا۔ ایم پی اے جہانداد نے تو انھیں جوتا دے مارا۔

 سردارسورن سنگھ کے قتل کے بعد پاکستان تحریک انصاف اس بات پرمتفق ہوگئی تھی کہ مبینہ قاتل بلدیو کمار کو اسمبلی کا حصہ نہیں بننے دیا جائے گا۔ پاکستان تحریک انصاف اقلیتی ممبران کی ترجیحی فہرست میں تبدیلی کے لیے الیکشن کمیشن بھی گئی لیکن اس میں تبدیلی نہ ہوسکی۔

چئیرمین تحریک انصاف عمران خان نےسردار سورن سنگھ کےقتل پر ان کے اہل خانہ سے تعزیت تو کی تھی لیکن بلدیو کمار کے اسمبلی آنے پر کوئی نوٹس نہ لے سکے۔

زرائع کا کہنا ہے کہ تبدیلی کے بڑے بڑے نعرے لگانے والوں سے ایک سوال ہے کہ وہ آج کہاں کھڑے ہیں۔ کیا اب مبینہ قاتل بھی اسمبلیوں کےممبر منتخب ہوں گے۔