پی پی ایل کیخلاف غیر ملکی اثاثوں کی خریداری میں گھپلوں کابڑا انکشاف

 پی پی ایل کیخلاف غیر ملکی اثاثوں کی خریداری میں گھپلوں کابڑا انکشاف


لاہور(24 نیوز) پاکستان پٹرولیم کمپنی میں بدعنوانی و بےضابطگیوں کےمعاملہ پرنیب نے پی پی ایل کے خلاف انکوائری رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرا دی۔
 تفصیلات کے مطابق نیب نے پی پی ایل کے خلاف انکوائری رپورٹ میں انکشاف کیا کہ پی پی ایل نے برطانوی کمپنی کے اثاثے بارہ کروڑ ڈالر زیادہ قیمت پرخریدے جبکہ اثاثوں کی مالیت چھ کروڑ ڈالرتھی ،  نیب کا کہنا تھا کہ مجرمانہ غفلت کے ذمہ داران و ملزمان کے خلاف انکوائری مکمل کر لی ہے,نیب رپورٹ میں پی ایس او اور بائیکو آئل کمپنی کے مابین سیل پرچیز معاہدے پر بھی سوالات اٹھا دیئے گئے، رپورٹ کے مطابق پی ایس او اوربائیکو معاہدے میں اختیارات کا ناجائز استعمال کیا گیا اورمعاہدے سے بائیکو کمپنی کو مالی فائدہ پہنچایا گی.

قومی احتساب بیورو کا کہنا تھا کہ پی ایس او بائیکو معاہدے کی تحقیقات مکمل کر لی ہیں اور قانونی تقاضے پورے کرنے کے بعد ریفرنس بھی دائر کیا جائے گاجبکہ وزارت پٹرولیم ، پی ایس او اور او جی ڈی ایس ایل کے کئی معاملات کی انکوائری ابھی جاری ہے۔