وزیر اعظم، چیف جسٹس ملاقات کا نواز شریف کو علم نہیں تھا: طلال چودھری


اسلام آباد (24 نیوز) وزیر مملکت برائے داخلہ امور طلال چودھری نے کہا ہے کہ وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی اور چیف جسٹس آف پاکستان کی ملاقات کا نوازشریف کو علم نہیں تھا۔ بلوچستان جسے حقیقی قیادت کی ضرورت ہے، وہاں مصنوعی قیادت پیدا کرنا غلط ہے۔

احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے طلال چودھری کا کہنا تھا کہ ملک میں سنجرانی کہنے والے کم اور نواز کہنے والے زیادہ ہیں۔ دوہزار اٹھارہ میں ٹیسٹ ٹیوب سیاستدانوں اور جماعتوں کا حشر ہو گا۔

یہ بھی پڑھئے:چیف جسٹس اپنا کام کریں، نواز شریف کا مشورہ 

انھوں نے واضح کیا کہ وزیر اعظم اور چیف جسٹس کی ملاقات کا نواز شریف کو علم نہیں تھا۔ طلال چودھری کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم وفاقی کابینہ اور پارٹی اجلاس میں چیف جسٹس سے ہونے والی ملاقات بارے آگاہ کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان کے نام پر ٹیسٹ ٹیوب سیاسی جماعت پیدا کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ بلوچستان جسے حقیقی قیادت کی ضرورت ہے وہاں مصنوعی قیادت پیدا کرنا غلط ہے۔ ناجانے کیوں ہر ایک کو سنجرانی بنایا جارہا ہے۔ ان لوگوں کو نواز شریف جیسی حقیقت چبھتی ہے۔

پڑھنا نہ بھولئے: کیپٹن (ر) صفدر نے اپنے گھر کا نام ریفرنس ہاؤس رکھ دیا
 
بلاشبہ ملک میں سنجرانی کہنے والے کم اور میں ہوں نواز کہنے والے زیادہ 2018 میں ٹیسٹ ٹیوب سیاستدانوں اور جماعتوں کا حشر ہو گا۔ جس سیاسی جماعت کی ولدیت کا ہی نا پتہ ہو اس کی پاکستان میں کیا گنجائش ہے۔

بعد ازاں شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت اجلاس میں انھوں نے وفاقی کابینہ اور پارٹی قیادت کو اعتماد میں لیا۔