شرح سود میں مزید اضافے کے امکانات

شرح سود میں مزید اضافے کے امکانات


کراچی(24نیوز) شرح سود میں مزید اضافے کے امکانات کے باعث بینکوں نے حکومت کو لمبی مدت کے لیے قرض دینے سے انکار کر دیا. اسٹیٹ بینک نئی مانیٹری پالیسی کا اعلان 29 مارچ کو کر رہا ہے۔

 حکومت نے اخراجات کے لیے بینکنگ سیکٹر سے نیا قرض لینے کے لیے ٹریژری بلز کی نیلامی کی۔ اس نیلامی سے حکومت نے چھ سو پچاس ارب روپے کے حصول کا ہدف رکھا تھا تاہم پرایمری ڈیلرز کی طرف سے تین ماہ کی مدت کے لیے صرف 10 ارب 13 کروڑ روپے کے بلز ہی خریدنے کی پیشکش کی گئی.  6 ماہ اور 12 ماہ کی مدت کے لیے قرض دینے کے لیے کسی بینک کی طرف سے کوئی پیشکش ہی نہیں کی گئی.

حکومت نے رواں ہفتے کے دوران 591 ارب روپے کے اندرونی قرضے واپس کرنے ہیں۔  اسٹیٹ بینک نئی مانیٹری پالیسی کا اعلان 29 مارچ کو کر رہا ہے۔  ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف کے مطالبہ پر شرح سود میں مزید اضافے کے امکانات کے باعث بینک نیا قرض دینے سے گریز کر رہے ہیں۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔