نوازشریف کی چوہدری نثار سے ملاقات،وزیرداخلہ کے بیان پرناراضگی کا اظہار


 اسلام آباد(24نیوز):فیض آباد دھرنے کے معاملے پر مسلم لیگ ن کے صدرنوازشریف وزیرداخلہ پر برہم ہو گئے۔انہوں نے کہا کہ دھرنے کودرست اندازمیں ہینڈل نہیں کیا گیا۔ اجلاس کے بعد چودھری نثارنے احسن اقبال کی خوب شکایتیں لگائیں۔

احتساب عدالت میں پیشی کے بعد نوازشریف پنجاب ہاؤس پہنچے۔ جہاں انھوں نے پارٹی کے مشاورتی اجلاس کی صدارت کی۔ غیر رسمی مشاورتی اجلاس میں چوہدری نثار، احسن اقبال، طارق فضل چوہدری، دانیال عزیز، ڈاکٹر آصف کرمانی، پرویز رشید، مائزہ حمیداور مصدق ملک نے شرکت کی۔وزیر داخلہ احسن اقبال نے فیض آباد دھرنے پربریفنگ دی۔ پارٹی صدر نوازشریف نے ان کی کارکرگی پرعدم اطیمنان کا اظہار کیا اورکہا کہ دھر نے کو درست انداز میں ہینڈل نہیں کیا گیا۔ وزیرداخلہ کی وضاحتیں نوازشریف کو مطمئن نہ کرسکیں۔

اجلاس میں پارٹی رہنماؤں نے وزیرقانون کے استعفے کے فیصلے پرتشویش کا اظہارکیا۔ دھرنے کے حوالے سے پارلیمانی جماعتوں کے کردار کو مایوس کن قرار دیاگیا۔اجلاس ختم ہونے پر سابق وزیر اعظم اورسابق وزیرداخلہ رو بہ رو آگئے۔ چودھری نثار نے حسب روایت اپنے تحفظات کا اظہار کیا۔انھوں نے وزیر داخلہ احسن اقبال کے بیان پر ناراضگی کا اظہار کیا اور اس پر وضاحت طلب کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔ چودھری نثار نے پارٹی پالیسی اور اداروں کے خلاف بیانات دینے والوں پر کڑی تنقید کی۔ سابق وزیر داخلہ نے دھرنا ختم کرانے اورعسکری قیادت سے ہونے والی ملاقات پر پارٹی قائدکو اعتماد میں لیا۔