زمین ہتھیانے والا پٹواری احاطہ عدالت سے گرفتار

زمین ہتھیانے والا پٹواری احاطہ عدالت سے گرفتار


لاہور(24نیوز) چیف جسٹس آف پاکستان نے جعلسازی سے زمین ہتھیانے والے پٹواری رانا جاوید کو احاطہ عدالت میں ہی گرفتار کروادیا، گرفتاری پر فریقین کی احاطہ عدالت میں تلخ کلامی ، انصاف ملنے پر متاثرین کے چیف جسٹس کے حق میں نعرے ، احاطہ عدالت میں سجدہ کر کے اللہ کا شکر ادا کیا ۔

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے کامونکی کی رہائشی آسیہ بی بی، محمد آصف سمیت دیگر کی جانب سے دائر درخواست پر سماعت کی۔درخواستگزار خاتون اور اس کے بھائی نے چیف جسٹس کے روبرو پیش ہو کر موقف اختیار کیا کہ گوجرانوالہ میں رانا جاوید نامی پٹواری نے اس کے ذہنی معذور والد کو شراب پلا کر دھوکہ دہی سے انگھوٹے لگوا کر 90 ایکٹر اراضی ہتھیا لی ہے۔ خاتون نے دھائی دیتے ہوئے کہا کہ پٹواری سیاسی اثرورسوخ رکھتا ہے۔

درخواست گزار خاتون کا کہنا تھا کہ اس نے متعلقہ افسران اور عدالتوں سے رجوع کیا لیکن شنوائی نہیں ہورہی۔درخواست گزاروں نے چیف جسٹس پاکستان سے استدعا کی کہ اراضی اصل مالکان کے حوالے کی جائے۔عدالتی استفسار پر پٹواری تسلی بخش جواب نہ دے سکا جس پر چیف جسٹس نےگرفتار کرنے کا حکم دے دیا ۔عدالتی حکم کے بعد فریقین کی احاطہ عدالت میں تلخ کلامی ہوئی ۔

عدالت سے انصاف ملنے پر متاثرہ خواتین چیف جسٹس کے حق میں نعرے لگاتی رہیں اور سجدہ ریز ہو کر اللہ کا شکر ادا کرتی رہیں۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔