کان کن کام چھوڑ کراپنے حقوق کیلئے سڑکوں پر نکل آئے

کان کن کام چھوڑ کراپنے حقوق کیلئے سڑکوں پر نکل آئے


کوئٹہ( 24نیوز ) پاکستان سینٹرل مائنز لیبر فیڈریشن کی جانب سے مائنز ورکروں کے حقوق کے بارے میں ریلی اور احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔
مائنز ورکروں نے میٹرو پولیٹن کے سبزہ زار سے ریلی نکالی جو کہ پریس کلب پہنچ کر احتجاجی مظاہرے میں تبدیل ہوگئی،مظاہرین نے بازوﺅں پر سیاہ پٹیاں باندھ رکھی تھیں اور ہاتھوں میں بینرز اٹھا رکھے تھے شدید نعرہ بازی کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ 1923کے مائننگ ایکٹ کو ختم کرکے نیا قانون بنایا جائے اور کان کنی سے ٹھیکیداری سسٹم ختم کیا جائے۔
بلوچستان میں کان کنوں کی تعداد لاکھوں میں ہے لیکن جان کی حفاظت نہیں ہے،رواں سال صوبے کے مختلف مقامات میں کوئلہ کانوں میں 98مزدور جاں بحق ہوچکے ہیں جبکہ 70سے زائد زخمی ہیں جن کو ابھی تک معاوضے کی ادائیگی نہ ہوسکی۔
مظاہرین کا مطالبہ ہے کہ مائنز ورکروں کی جانوں کو محفوظ بنانے کے لیے فوری طور پر اقدامات اٹھائے جائیں اور صحت و سلامتی کے قانون کو نافذ کیا جائے ۔