فاٹا میں شخصیات کے ناموں سے جاری ترقیاتی سکیمیں روکنے کی ہدایت

فاٹا میں شخصیات کے ناموں سے جاری ترقیاتی سکیمیں روکنے کی ہدایت


اسلام آباد (24 نیوز) سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے سیفران نے فاٹا میں افراد و شخصیات کے ناموں سے جاری تمام ترقیاتی سکیمیں روکنے کی ہدائت کردی۔ کمیٹی کی جانب سے 776 ملین روپے کی 18 سکیموں کو روکنے کی سفارش بھی کی گئی ہے۔

چیئرمین کمیٹی سینیٹر ہلا الرحمان کی صدارت میں ہونے والے اجلاس میں اس بات کا اظہار کیا گیا کہ کسی ایک شخص کے نام پر بننے والی سکیموں پر قبائیلی تنازعات ہوسکتے ہیں۔ قائمہ کمیٹی میں اس بات پر فیصلہ کیا گیا کہ ایسا طریقہ کار وضع کیا جائے جس کی بنیاد پر یہ طے کیا جا سکے کہ سکیم کا نام کس معیار پر رکھا جائے گا۔

کمیٹی نے ترقیاتی سکیموں میں بڑے پیمانے پر بے ضابطگیوں پر افسوس کا اظہار بھی کیا۔ اجلاس کے دوران ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل میں بیوروکریسی کی رکاوٹوں پر وزیر مملکت غالب خان نے استعفیٰ کی دھمکی دے دی۔ وزیر مملکت غالب خان سیکرٹری پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ زبیر قریشی پر چڑھ دوڑے۔ غالب خان نے کہا کہ فاٹا کو غلام رکھا گیا ہے۔ فاٹا میں اصلاحات فوری طور پر کی جائیں۔

چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ ترقیاتی سکمیوں میں تاخیر پر آپ کابینہ میں بات کرتے۔ انہوں نے کہا کہ پہلی مرتبہ ہورہا ہے، وزیر اور وزارت آپس میں الجھ رہے۔