مہنگا ترین میٹرو منصوبہ مارچ تک مکمل کرنیکا اعلان

مہنگا ترین میٹرو منصوبہ مارچ تک مکمل کرنیکا اعلان


پشاور ( 24نیوز )صوبائی حکومت نے پشاورکے سب سے بڑے بی آرٹی منصو بے کو مارچ 2019تک مکمل کرنےکا اعلان کردیاہے،حکومت کے دعوﺅں کے مطابق منصوبے کی کل لاگت 66ارب روپے ہے تاہم منصوبہ شروع کرنے سے قبل مختلف اقسام کے4ارب روپوں تک انفراسٹرکچرکو اکھاڑدیاگیا،اسی طرح ریلوے، پی ٹی سی ایل،محکمہ سوئی گیس کو ڈیڑھ ارب سے زائد کی ادائیگی کی گئی جس کا ذکرحکومت بھول گئی ہے۔

اربوں کے منصوبے کیلئے اربوں کا اکھاڑپچھاڑکرکے قومی خزانے کو نقصان پہنچایاگیا،اسی طرح کل لاگت کامجموعہ 70ارب روپے سے زائد ہے۔پشاورکے سب سے بڑے پراجیکٹ بی آرٹی منصوبہ ہے جس کی لاگت کا تخمینہ صوبائی حکومت 66ارب روپے توبتارہی ہے تاہم منصوبے کیلئے بیوٹیفیکیشن منصوبے کے تحت سڑک کنارے سبزہ زار، زیرزمین اورہوائی گزرگاہیں، سڑکیں ودیگرانفراسٹرکچرکواکھاڑ کر4ارب سے زائدکا نقصان ہوا،اسی طرح سوئی گیس، پی ٹی سی ایل اورواپڈاکو ڈیڑھ ارب سے زائد ادائیگی کی گئی، بڑی رقم پرصوبائی حکومت خاموش رہی ہے۔صوبائی حکومت کے ترجمان نے کہا ہے کہ اس لیول کے منصوبوں پررقم خرچ کرنا عوام کی مفادمیں ہے۔منصوبے سے شہرکی اصل خوبصورتی بحال ہوگی۔

خیبرپختونخوا کی اپوزیشن کہیتی ہے کہ انہیں اعتمادمیں نہیں لیاگیا،ایک غیرضروری منصوبے پرپہلے مقررکردہ رقم سے زیادہ پیسے خرچ کرناصوبائی حکومت کی حکمت عملی پرسوالیہ نشان ہے۔ایک طرف قومی خزانے کونقصان پہنچایاگیااوردوسری طرف شہرپشاورکو کھنڈرات میں تبدیل کیاگیا۔

بی آرٹی منصوبہ شروع کرنے سے قبل 49ارب کی لاگت کا اعلان کیاگیاتھا۔ڈیزائنزتبدیل کرنے اورناقص حکمت عملی کے باعث بعدازاں کل لاگت 66ارب روپے تک پہنچ گئی،اکھاڑپچھاڑ کانقصان، اداروں کوادائیگی کی رقم ملاکر70ارب سے زائد پیسہ اب تک خرچ ہواہے،مزید کسی تبدیلی اورتاخیرکی صورت میں کل لاگت کا تخمینہ بڑھ جانےکی صورت میں قومی خزانےپرمزید بوجھ ڈالا جاسکتاہے۔