فیصل آباد میں وکلاء نے سی پی او کے دفترپردھاوابول دیا

فیصل آباد میں وکلاء نے سی پی او کے دفترپردھاوابول دیا


  فیصل آباد (24نیوز) وکلاء نے سی پی او کے دفترپردھاوابول دیا۔ عارف والہ میں حادثہ میں میاں بیوی جان سے گئے تومیاں چنوں میں ظالموں نے فائرنگ کرکے میاں اوربیوی کومارڈالا۔ جبکہ ادھرڈیرہ مرادجمالی میں بھی غیرت کے نام پر2افراد کی جان لے گئی۔

 فیصل آباد میں وکلا نے سی پی او اطہر اسماعیل کے دفتر پر دھاوا بول دیا۔ مشتعل وکلا زبردستی دفتر میں داخل ہوئے اور وہاں توڑ پھوڑ بھی کی۔ پولیس کی بھاری نفری سی پی او آفس پہنچ گئی۔عارف والامیں بوریوالاروڈپرتیزرفتارمسافربس کی ٹکرسے موٹرسائیکل سوارمیاں بیوی جاں بحق ہوگئے۔ بس ڈرائیورموقع سے فرارہوگیا۔ جاں بحق جوڑے کی لاشیں اسپتال منتقل کردیں گئیں۔

یہ بھی پڑھیں:پولیس کی غنڈہ گردی، بے گناہ کی جان لے لی
 
میاں چنوں کے گاوں میں نامعلوم افرادنے فائرنگ کرکے میاں بیوی کوقتل کردیا۔ پولیس نے نعشوں کواسپتال منتقل کردیا۔شکرگڑھ میں سسرالیوں نے بہو کوماردیا۔ 3ماہ قبل نبیلہ کی زاہد سے شادی ہوئی تھی۔ مقتولہ کے اہلخانہ کا کہنا ہے خاوند بیرون ملک گیا تو سسراور ساس نے بہو کو پھندہ ڈال کر قتل کردیا۔ پولیس نے لڑکی کے سسر کوگرفتارکرکے مقدمہ درج کرلیا ہے۔

پڑھنا نہ بھولیں:سنگدل شخص کا بیوی، بیٹی کے ساتھ ایسا کام کہ جان کر رونگٹے کھڑے ہوجائیں گے
 
ڈیرہ مرادجمالی کی گوٹھ محمد علی میں غیرت کے نام پرخاتون سمیت 2 افراد کوقتل کردیا گیا۔ واردات کے بعد ملزم موقع سے فرارہوگئے۔بولان کے علاقے بھاگ تحصیل کے حدود گاؤں کلڑا میں بجلی سےکرنٹ لگنے پر4 خواتین جاں بحق اور 6 زخمی ہوگئیں۔نوشہرہ پولیس نے تاروجب کے مقام پراسلحہ اسمگلروں کے خلاف کامیاب کارروائی کرتے ہوئے بھاری مقدارمیں اسلحہ برآمدکرلیا۔ جبکہ اسمگلر باچا علی کوگرفتارکرلیا گیا۔

یہ خبر ضرور پڑھیں:رابعہ زیادتی و قتل کیس: تین ملزمان کے ڈی این اے سیمپل میچ کر گئے
 
چکوال میں بس ڈرائیور کی بے حسی نے مسافر کی جان لے لی۔ 5روزقبل بس کے نیچے مسافرکے آنے کی فوٹیج ٹوئنٹی فورنیوز نے حاصل کرلی۔پشاورمیں گزشتہ روز جاں بحق ہونے والے بچوں کے لواحقین نے شدید احتجاج کیا۔ مظاہرین کا کہنا ہےتینوں بچوں کی موت غلط ویکسینیشن سے ہوئی۔ ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے۔

یہ  بھی پڑھیں:خاتون پولیس آفیسر نے ’دبنگ خان ‘کا روپ دھار لیا
 
پشاورمیں ہی لواحقین کے نرس پرتشدد کے خلاف اسپتال کی تمام نرسیں سراپا احتجاج بن گئیں۔ مظاہرین نے تشددواقعات سے بچاؤ کے لیے نرسنگ اسٹاف کوسیکیورٹی دینے کامطالبہ کردیا۔ نرسوں کا کہنا ہے اگر سیکورٹی فراہم نہ کی گئی تو کام بند کر دیں گے۔