سندھ حکومت اور ینگ ڈاکٹرز کے درمیان مذاکرات کامیاب

سندھ حکومت اور ینگ ڈاکٹرز کے درمیان مذاکرات کامیاب


کراچی(24نیوز) سندھ حکومت نے ینگ ڈاکٹرز کے مطالبات تسلیم کر لیئے ہیں جس کے بعد  مذاکرات کامیاب ہوگئے ہیں۔ ینگ ڈاکٹر نے او پی ڈی کا بائیکاٹ ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سندھ حکومت نے ینگ ڈاکٹرز کے مطالبات تحریری طور پر مان لیےہیں۔ مذاکرات ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے وفد اور وزیرصحت ڈاکٹر عذرا فضل کے درمیان ہوئے۔ ینگ ڈاکٹرز کا پنجاب اور خیبرپختونخوا کے برابر مراعات اور سروس اسٹرکچر بحال کرنے کا مطالبہ تھا اور اسی سلسلے میں  انھوں نے تین دن سے احتجاج کر رکھا تھا۔ مذاکرات کامیاب ہونے کے بعد ینگ ڈاکٹرز نے احتجاج ختم کر دیاہے۔

ینگ ڈاکٹرز کے احتجاج کا تیسرا روز:

سندھ بھر کے سرکاری ہسپتالوں میں آج بھی او پی ڈیزبند ہونے کے باعث مریض پریشان رہے،کراچی میں ینگ ڈاکٹرز نے جناح، سول ، عباسی شہید اور دیگر سرکاری ہسپتالوں میں آج بھی او پی ڈیز کو بند رکھا،ڈاکٹر کہتے ہیں ہمارے مطالبات ابھی تک پورے نہیں ہوئے، جب تک تحریری طورپرہمارے تنخواہوں میں اضافےکا نوٹیفکیشن جاری نہیں ہوتا احتجاج جاری ہے۔ڈاکٹرز کے احتجاج کے باعث کراچی کے تمام سرکاری ہسپتالوں آج بھی مریضوں کو مایوس ہوکر واپس لوٹنا پڑا۔

احتجاج کے باعث وزیر صحت سندھ نے ینگ ڈاکٹر ایسوسی کا تین رکنی وفد کو مذاکرات کیلئے اپنے آفس بلا لیا لیا ہے، گذشتہ روز محکمہ صحت سندھ کے ترجمان نے بتایا تھا کہ ینگ ڈاکٹرز کے الاؤنسز میں اضافے کا مطالبہ تسلیم کرلیا گیا ہے جس کے تحت مختلف گریڈز میں اضافہ 25 ہزار سے 75 ہزار تک کیا گیا ہےلیکن اس اعلان کا کوئی بھی باضابطہ نوٹفکیشن جاری نہیں ہوا۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔