پیپلز پارٹی اور ن لیگ نےالیکشن کمیشن سے بڑا مطالبہ کر دیا

پیپلز پارٹی اور ن لیگ نےالیکشن کمیشن سے بڑا مطالبہ کر دیا


اسلام آباد(24نیوز) پیپلز پارٹی اور ن لیگ نے الیکشن کمیشن سے استعفے کا مطالبہ کردیا، فرحت اللہ بابر نے کہا  کمیشن اپنی ذمے داریاں پوری نہیں کرسکا، فضل الرحمان نے کہا اسمبلیوں میں بیٹھنے یا نہ بیٹھنے کا حتمی فیصلہ اے پی سی کے بعد کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق دونوں جماعتوں کےوفود کےمذاکرات کے بعد پیپلز پارٹی رہنما فرحت اللہ بابر کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ دونوں جماعتیں متفق ہیں کہ الیکشن میں رگنگ ہوئی۔ اسمبلی میں رہ کر تمام قوتوں کو بے نقاب کریں گے۔ ن لیگی رہنماوں سے ملاقات کے بعد پیپلز پارٹی کا وفد متحدہ مجلس عمل کے سربراہ مولانا فضل الرحمن سے ملاقات کیلئے پہنچا۔ ملاقات میں انتخابی صورتحال سے متعلق اہم مشاورت کی۔ ملاقات کے بعد پیپلز پارٹی اور ایم ایم اے کی مشترکہ پریس کانفرنس میں سید یوسف رضا گیلانی کا کہنا تھا کہ بلاول بھٹو الیکشنز کے نتائج مسترد کر چکے ہیں۔ہم اسمبلیوں میں بیٹھنے کے حامی ہیں۔ مولانا فضل الرحمن کو بھی حلف اٹھانے پر قائل کرنے کی کوشش کی ہے۔

یہ بھی لازمی پڑھیں۔۔۔پنجاب لینا ہے تو پیپلز پارٹی کو ساتھ ملانا ہے 

 ایم ایم اے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ہم انتخابات کو مسترد کرچکے ہیں۔ اسمبلیوں میں بیٹھنے یا نہ بیٹھنے کا حتمی فیصلہ اے پی سی کے بعد کریں گے۔ فرحت اللہ بابر کے مطابق پنجاب میں ن لیگ کی سپورٹ کا فیصلہ پیپلز پارٹی قیادت کرے گی۔ واضح رہے کہ مزاکرات میں شاہد خاقان عباسی اور ایاز صادق نے ن لیگ کی نمائندگی کی، پیپلز پارٹی کی جانب سے یوسف رضا گیلانی، راجہ پرویز اشرف، فرحت اللہ بابر، شیری رحمان، نوید قمر، خورشید شاہ اور قمر زمان کائرہ شریک ہوئے۔