پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی اونٹ کے منہ میں زیرہ کے برابر



اسلام آباد( 24نیوز )عالمی مارکیٹ سے مقابلہ کیا جائے تو پاکستان میں تیل کی قیمتوں میں کمی اونٹ کے منہ میں زیرہ دینے کے مترادف ہے۔

عالمی مارکیٹ میں ایک ماہ کے دوران پٹرول 15 ڈالر فی بیرل کم ہوا، 2 نومبر کو عالمی مارکیٹ میں کروڈ آئل کی قیمت 73 ڈالر فی بیرل جبکہ حال ہی میں 59 ڈالر فی بیرل کمی آئی ہے، عالمی مارکیٹ میں قیمت میں 15 ڈالر فی بیرل کمی کے باوجود حکومت نے صرف 2 روپے قیمت کم کی، غریبوں کا درد رکھنے کی دعویدار حکومت نے عوام کو کوئی ریلیف نہیں دیا۔

یاد رہے وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں پر بات کرنا چاہتا ہوں، پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں کمی کرنا چاہتا ہوں،ہم نے پٹرول کی قیمتیں بڑھانے کے بجائے ،ٹیکس کم کیے،سابق دور حکومت میں پٹرول پر 15 فیصد ٹیکس تھا۔

نئی حکومت آئی تو پٹرول کی قیمتیں کم ہوئیں،مئی کی نسبت نومبر میں پٹرول پر ٹیکس کم ہے،انہوں نے پٹرول اور ڈیزل کی قیمت میں دو روپے کمی کا اعلان کیا ہے،مٹی کے تیل کی قیمت تین روپے کمی کی گئی۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer